لاہور: حکومتِ پنجاب نے صوبے کے ٹیکس فری بجٹ 25-2024 میں شعبہ صحت کیلیے فنڈز میں اضافہ کرتے ہوئے اس کیلیے 539 ارب روپے مختص کیے۔

گزشتہ روز پنجاب اسمبلی میں وزیر خزانہ مجتبیٰ شجاع الرحمان نے بجٹ 25-2024 پیش کیا جس کا کُل حجم 5446 ارب روپے ہے۔

بجٹ دستاویز کے مطابق نواز شریف انسٹیٹیوٹ آف کینسر ٹریٹمنٹ اینڈ ریسرچ لاہور کے قیام کیلیے 6 ارب روپے مختص کیے گئے جس کا کُل تخمینہ 56 ارب روپے ہے۔ حکومت نے نواز شریف انسٹیٹیوب آف کارڈیالوجی سرگودھا کے قیام کیلیے 1 ارپے روپے رکھے گئے جس کا کُل تخمینہ 8 اعشاریہ 8 ارب روپے ہے۔

صوبے میں موٹرویز پر ایمبولینس سروس کی فراہمی کیلیے 500 ملین روپے اس بجٹ میں مختص کیے گئے جبکہ پنجاب بھر میں بنیادی صحت یونٹس اور دیہی صحت مراکز کی بہبود و بحالی کیلیے 23 اعشاریہ 5 ارب روپے رکھے گئے جس کا کُل تخمینہ 55 ارب روپے ہے۔

علاوہ ازیں، ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹرز اور تحصل ہیڈکوارٹرز اسپتالوں کی بحالی اور اپ گریڈیشن کیلیے 7 اعشاریہ 6 روپے رکھے گئے جس کا کُل تخمینہ 87 اعشاریہ 2 ارب روپے ہے۔

بجٹ میں انسٹیٹیوٹ آف مینٹل ہیلتھ لاہور کی تعمیرِ نو کیلیے 1 ارب روپے مختص کیے گئے جبکہ اس کا کُل تخمینہ 2 ارب روپے ہے۔ اسی طرح صحت کے مراکز پر کیتھ لیب کی سہولت کُل تخمینہ 2 اعشاریہ 4 ارب روپے لگایا گیا ہے۔

Card image cap
پولیو وائرس: زیادہ سے زیادہ سیوریج سیمپلز میں وائرس کی تصدیق ہونے لگی

ملک بھر میں پولیو وائرس کی نشان دہی کے لیے لیے جانے والے زیادہ سے زیادہ سیوریج سیمپلز میں وائرس کی تصدیق ہونے لگی ہے، جو ملک کے نظام صحت کے لیے ایک بڑے خطرے کی علامت ہے۔

تفصیلات کے مطابق 5 اضلاع سے پولیو ٹیسٹ کے لیے 20 مئی کو سیوریج سیمپلز لیے گئے تھے، جن میں سے 4 اضلاع کے 4 سیوریج سیمپلز میں پولیو وائرس کی تصدیق ہو گئی ہے۔

ذرائع کے مطابق جن اضلاع کے سیمپلز میں وائرس کی تصدیق ہوئی ہے ان میں صوابی، دکی، سبی، اور قلعہ سیف اللہ شامل ہیں، ان سیمپلز میں وائلڈ پولیو وائرس ون، وائے بی تھری اے کلسٹر پایا گیا ہے، مجموعی طور پر رواں سال چاروں صوبوں سے 172 سیوریج سیمپلز پولیو پازیٹو ہوئے ہیں، جب کہ 44 اضلاع کی سیوریج پولیو زدہ ہو چکی ہے۔

ذرائع کے مطابق صوابی کے علاقے شاہ منصور، کالا پل بدرے کی سیوریج، سبی کے مین گندا نالہ کی سیوریج، ضلع دکی کے علاقے نصیر آباد محلے کی سیوریج، اور قلعہ سیف اللہ کے علاقے کلے پوٹی کی سیوریج پولیو سے متاثرہ نکلی ہے۔

پولیو وائرس نے ملکی ہیلتھ اسٹرکچر کی جڑوں کو ہلا کر رکھ دیا

رواں برس قلعہ سیف اللہ، دکی کی سیوریج پہلی بار پولیو پازیٹو ہوئی ہے، جب کہ رواں برس ملک میں پولیو وائرس کے 4 کیسز رپورٹ ہو چکے ہیں۔

Card image cap
ڈپریشن : مریض خود کو بیمار تصور کیوں نہیں کرتا؟

ڈپریشن ڈس آرڈر ایک پیچیدہ حالت ہے، یہ دکھی محسوس کرنے یا محض مشکل وقت سے گزرنے سے کہیں زیادہ پیچیدہ ہے، پوری دنیا میں ڈپریشن حیرت انگیز حد تک ایک عام بیماری بن چکی ہے۔

پہلے زمانوں میں لوگ اس بارے میں گفتگو کرنا معیوب سمجھتے تھے تاہم اب نئی نسل کی سوچ میں تبدیلی آرہی ہے، اچھی بات یہ ہے کہ نفسیاتی بیماریوں پر جتنی توجہ درکار ہے اتنی ملنا شروع ہو گئی ہے۔

ڈپریشن ایک موڈ سے متعلقہ بیماری ہے اور یہ روز مرہ کے کام مثلا کھانا، پینا، سونا، جاگنا اور معاشرتی رویوں کو شدید طور پر متاثر کرتا ہے۔

ڈپریشن کی علامات اور اقسام 

ڈپریشن کی کئی اقسام کی ہوسکتی ہیں جیسا کہ سیزنل، پوسٹ پارٹم (بچے کی پیدائش کے بعد والے عرصے میں جنم لینے والا) اور (مستقل رہنے والا ڈپریشن)۔ کسی بھی قسم کے ڈپریشن میں پیدا ہونے والی ناامیدی کی شدید لہر انسان کو تباہ کن حد تک متاثر کرتی ہے۔

امریکن کالج آف اوبسٹیٹریشینز اینڈ گائناکالوجسٹ (اے سی او جی) کے مطابق ڈپریشن حمل کی ایک عام پیچیدگی ہے، اگر اس کی پہچان اور علاج نہ کیا جائے تو ممکنہ طور پر تباہ کن نتائج چھوڑتی ہے۔

بعض حالات میں لوگوں کو اداسی، بے حسی، یا توانائی کی کمی کے احساسات ہوتے ہیں جو دنوں ہفتوں یا مہینوں تک رہ سکتے ہیں، لوگ سونے، کھانے یا حفظان صحت کے معمولات میں تبدیلیوں کا تجربہ کرسکتے ہیں اور دوستوں کے ساتھ ملنا یا کام پر جانا چھوڑ سکتے ہیں۔

بعض اوقات، افسردہ دورانیے کا سامنا کرنے والے افراد ناامیدی محسوس کرسکتے ہیں یا یہ کہ زندگی اب جینے کے قابل نہیں رہی جو خودکشی کے خیالات کے ساتھ آ سکتی ہے لیکن ان سب باتوں کے باوجود مریض خود کو بیمار تصور نہیں کرتا جو علاج میں سب سے بڑی رکاوٹ ہے۔

یہ ممکن ہے کہ آپ کسی ایسے شخص کو جانتے ہوں جسے ڈپریشن ہو اور وہ ظاہر نہ کرتا ہو، امریکہ میں 7 فیصد سے زائد آبادی نے پچھلے سال کم از کم ایک بڑا ڈپریشن کا تجربہ کیا ہے۔

مایوس ہرگز نہ ہوں، علاج کریں

ڈپریشن انسان میں ناامیدی کے جذبات تو پیدا کر دیتا ہے لیکن یہ صورتحال قابل علاج ہے لہٰذا اسے ناامیدی سے بالکل نہیں دیکھنا چاہیے۔

ادویات کے باقاعدہ استعمال سے امید کا سورج دوبارہ انسان کی زندگی میں مثبت کرنیں چمکا سکتا ہے جو کہ انسان کے تعلقات کی بہتری کا باعث بنتا ہے، مندرجہ ذیل گھریلو علاج کی مدد سے ڈپریشن کی علامات میں کمی لائی جا سکتی ہے۔

زعفران کا استعمال

زعفران ایک دلکش رنگ کی حامل بوٹی ہے، اس کے ساتھ ساتھ زعفران بہت سے طبی فوائد کا حامل بھی ہے، یہ اپنی اینٹی آکسیڈنٹ خصوصیات کی بنیاد پر ڈپریشن کا قدرتی علاج تصور کیا جاتا ہے۔ کچھ طبی تحقیقات کے مطابق زعفران کے استعمال سے دماغ میں سیروٹونن کا لیول متوازن ہوتا ہے جو موڈ کو بہتر بنانے والا کیمیکل ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ ڈپریشن کی علامات میں کمی لانے کے لیے زعفران کے سپلیمنٹس بھی استعمال کیے جاتے ہیں۔

ورزش

ڈپریشن کی علامات میں کمی لانے کے لیے ورزش کو ایک اہم علاج تصور کیا جاتا ہے۔ باقاعدگی کے ساتھ ورزش کرنے سے دماغ مثبت انداز سے سوچنا شروع کرتا ہے جس کی وجہ سے اس بیماری کی علامات میں کمی آتی ہے۔

اومیگا-3 فیٹی ایسڈز

اومیگا-3 فیٹی ایسڈز جسمانی اور دماغی صحت کو برقرار رکھنے کے لیے نہایت اہم فیٹ تصور کیے جاتے ہیں۔ کچھ تحقیقات کے مطابق ان کے باقاعدہ استعمال سے ڈپریشن کی شدت میں کمی آتی ہے۔

وٹامن ڈی

وٹامن ڈی صحت کو برقرار رکھنے کے لیے نہایت اہم تصور کیا جاتا ہے، جب کہ بد قسمتی سے بہت سے افراد اس وٹامن کی کمی کا شکار ہوتے ہیں۔ ایسے افراد جو وٹامن ڈی کی کمی کا شکار ہوں ان میں ڈپریشن کی علامات شدت اختیار کر سکتی ہیں۔

زنک

زنک کا شمار ان منرلز میں کیا جاتا ہے جو دماغی صحت کو برقرار رکھنے کے لیے نہایت اہم کردار ادا کرتے ہیں۔ اس کے ساتھ ساتھ یہ منرل استعمال کی جانے والی مختلف چیزوں کی سوزش کم کرنے والی اور اینٹی آکسیڈنٹ خصوصیات کو بھی بڑھاتا ہے۔ زنک کی کمی کی وجہ سے ڈپریشن کے خطرات بڑھ سکتے ہیں۔

نوٹ : مندرجہ بالا تحریر معالج کی عمومی رائے پر مبنی ہے، کسی بھی نسخے یا دوا کو ایک مستند معالج کے مشورے کا متبادل نہ سمجھا جائے۔

Card image cap
کراچی میں خطرناک وائرس کا پھیلاؤ ، پہلی ہلاکت سامنے آگئی

شہر قائد میں خطرناک وائرس نے سر اٹھانا شروع کردیا اور رواں سال کی پہلی ہلاکت سامنے آگئی۔

تفصیلات کے مطابق کراچی میں خطرناک وبائی مرض نے پیر پھیلانے شروع کر دیئے ہیں۔

شہر میں رواں سال کے دوران ڈینگی سے پہلی ہلاکت سامنے آگئی، اسپتال زراٸع نے بتایا ہے کہ ڈینگی سے متاثر بچہ تشویشناک حالت میں اسپتال لایا گیا تاہم پلیٹیلیٹس ختم ہونے کے باعث بچہ انتقال کر گیا۔

زراٸع نے بتایا کہ بچہ نجی اسپتال میں زیر علاج تھا ، وہ دو تین دن سے بیمار تھا اور اس کی عمر 12 سال تھی۔

نجی اسپتال کی انتظامیہ نے ڈی ایچ او ایسٹ کو ڈینگی سے رواں سال کی پہلی موت کی رپورٹ فراہم کردی ہے۔

محکمہ صحت سندھ کی جانب سے ڈینگی کیسز کی یومیہ رپورٹ جاری کرنے کا سلسلہ بند ہے اور ڈینگی سے ہلاکت کی کوٸی تصدیق تاحال نہیں کی گئی، نگراں حکومت میں یومیہ کیسز کی رپورٹ جاری کی جاتی تھی۔

یاد رہے محکمہ صحت سندھ نے مختلف بیماریوں کی سالانہ موازنہ رپورٹ جاری کی تھی ، جس میں بتایا تھا کہ سال 2022 میں ڈینگی کے 23274 کیسز اور 64 اموات ریکارڈ ہوئیں جبکہ سال 2023 ڈینگی کے حوالے سے انتہائی خوش آئند رہا جس میں ڈینگی کے 2852 کیسز میں سے کسی شخص کی موت واقع نہیں ہوئی۔

ڈینگی کی علامات

ڈینگی بخار مچھروں کی ایک قسم ایڈیز کے کاٹنے سے ہوتا ہے جو خود ڈینگی وائرس سے متاثر ہوتا ہے اور کاٹنے کے بعد خون میں وائرس کو منتقل کردیتا ہے۔

ڈینگی بخار کی پہلی علامت یہ ہے کہ مریض کے سر میں شدید قسم کا درد ہوتا ہے، ڈینگی وائرس کے سبب کمر کے پچھلے حصے میں، اور ٹانگوں اور پٹھوں میں شدید درد ہوتا ہے۔

بخار کے باعث ڈائریا بھی ہو سکتا ہے جس کی وجہ سے جسم سے نمکیات خارج ہو جاتی ہیں اور مریض میں کمزوری بڑھ جاتی ہے

جب یہ سردرد، بخار،متلی اور قے ،کمر درد جسم میں سرخ دانے نکلنے جیسی علامات ظاہر ہوں تو فوری مریض کو ڈاکٹر کو دکھا لینا چاہیے اور خون کا ٹیسٹ کروا لیں، ورنہ اگر اسے بروقت نہ دکھایا جائے تو پھر “ڈینگو ہمبرج فیور شروع ہو جاتا ہے جو کہ جان لیوا ہے۔


بارش کے حوالے سے محکمہ موسمیات کی اہم پیشگوئی

بلوچستان ، خیبر پختونخوا ،   پنجاب ، اسلام آباد، گلگت بلتستان اور کشمیر میں آندھی  اور گرج چمک کے ساتھ بارش کا امکان ہے جبکہ شمال مشرقی بلوچستان اور خیبر پختونخوا کے بعض مقا مات پر موسلادھار بارش کی بھی توقع ہے۔

شہر   لاہور کا موسم مطلع جزوی طور پر ابر آلود  اور خشک رہنے کا امکان ہے جبکہ آئندہ 24گھنٹے کے دوران موسم میں نمایاں تبدیلیاں متوقع ہے۔ محکمہ موسمیات کے مطابق  شہر کا موجودہ درجہ حرارت 31 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا ہے جبکہ زیادہ سے زیادہ درجہ حرارت 36 ڈگری تک جانے کا امکان ہے۔ ہوا میں نمی کا تناسب 20 فیصد ریکارڈ کیا گیا ہے۔ عالمی فضائی آلودگی کی درجہ بندی میں لاہور دوسرے نمبر پر آگیا ہے۔ شہر میں فضائی آلودگی کی مجموعی شرح 185ریکارڈ کی گئی ہے۔ یو ایس قونصلیٹ 246،سید مراتب علی روڈپر آلودگی کی شرح 191ریکارڈ    کی گئی ہے۔ کل سے 29اپریل تک شہر میں بارش برسانے والے سسٹم کی انٹری کی پیشگوئی کی گئی ہے۔ 

  ملتان میں آج مطلع ابر آلو د رہے گا۔ محکمہ موسمیات کی ملتان میں آج تیز بارش کی پیشگوئی کی گئی ہے۔ ملتان میں درجہ حرارت36ڈگری تک جانے کا امکان ہے۔  کم سے کم درجہ حرارت25ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا جانے کا امکان ہے۔ ہوا میں نمی کاتناسب41فیصد ریکارڈ کیاگیا ہے جبکہ فضا میں آلودگی کی مجموعی شرح58ریکارڈ کی گئی  ہے۔

 کراچی کا موسم مطلع صاف ، تیز دھوپ کا راج ہے، ماہرین کے مطابق دن کے اوقات میں گرمی کی شدت بڑھنے کا امکان ہے۔ محکمہ موسمیات کے مطابق  شہر کا موجودہ درجہ حرارت 27 ڈگری ہے۔ کم سے کم درجہ حرارت 26.5 ڈگری ریکارڈ  کیا گیا جبکہ  زیادہ سے زیادہ درجہ حرارت 36 ڈگری تک جانے کا مکان ہے۔ ہوا میں نمی کا تناسب 77 فیصد ہے۔ شہر میں مغربی سمت سے 19 کلو میٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے ہوائیں چل رہی ہے۔ دنیا کے آلودہ ترین شہروں میں کراچی 22 ویں نمبر پر آ گیا جبکہ پاکستان کے آلودہ ترین شہروں میں کراچی پانچویں نمبر پر آگیا ہے۔ ہوا میں آلودہ ذرات کی مقدار 88 پرٹیکیولیٹ میٹرز ریکارڈ   ہے۔

 دوسری جانب مغربی ہواؤں کے زیر اثر بلوچستان کے علاقےچاغی میں بارش سے کئی کچے مکانات گر گئے۔ کوہلو اور خاران شہر اور گردونواح میں بھی گرج چمک کے ساتھ بارش ہوئی ہے جس سے نشیبی علاقے زیرآب آگئے ہیں۔

 محکمہ موسمیات کی کل سے 29 اپریل کے دوران بالائی خیبر پختونخوا، گلیات،کشمیر اور گلگت بلتستان میں آندھی اورگرج چمک کے ساتھ تیز بارش کی پیش گوئی ہے۔  بارشوں کے باعث ندی نالوں میں طغیانی اور لینڈ سلائیڈنگ کا بھی خدشہ ہے۔
 

بارشوں نے دبئی ائیرپورٹ بند کروا دیا

 یو اے ای میں تاریخ کی شدید ترین بارشوں سے دبئی ائیرپورٹ  پر آپریشنز بری طرح متاثر ہونے کے بعد آئیرپورٹ کو جمعہ کی صبح تک کیلئے بند کرنا پڑ گیا۔

یو اے ای ایوی ایشن نے دبئی ائیرپورٹ کو جمعہ کی صبح 4بجے تک بند کرنے کا اعلان کیا ہے۔ 

بذریعہ نوٹم غیر ملکی ائیرلائینز کو دبئی ائیرپورٹ کی بندش کے متعلق آگاہ کردیا گیا۔

آج رات تمام ائیرلائینز دبئی کے لیے جمعہ کی صبح 4بجے کے بعد سے فلائیٹ شیڈول مرتب کر رہی ہیں۔ 

لاہور سمیت ملک بھر سے دبئی جانے والی پروازوں کو ری شیڈول کرنے کی ہدایات جاری ہو چکی ہیں۔ 
لاہور سے دبئی جانے والی ائیربلیو کی پرواز پی اے 418 کی روانگی میں تاخیر کردی گئی۔  
لاہور سے ایمریٹس جانے والی پرواز ای کے 623 کی روانگی میں ساڑھے 5گھنٹے تاخیر کر دی گئی۔
دبئی سے لاہور آنے والی ایمریٹس کی پرواز ای کے 622 دو گھنٹے پنتالیس منٹ تاخیر کا شکار کردی گئی۔

لاہور سے دبئی جانے والی پی آئی اےکی پرواز پی کے 203 کی روانگی میں بھی 4گھنٹے کی تاخیر کردی گئی۔
پی۔آئی اے، ائیربلیو اور ایمریٹس کی جانب سے لاہور ائیرپورٹ سے پروازوں کے شیڈول تبدیل کردیا۔
 دبئی ائیرپورٹ صرف پروازوں کی آمد کے لیے بند کیا گیا ہے۔دبئی سے پروازوں کی دیگر ممالک کی روانگی شیڈول کے مطابق ہی ہو گی۔

لیسکو کےخلاف شاہدرہ سٹیشن کےعلاقہ مکینوں کا احتجاج

لیسکو کےخلاف شاہدرہ سٹیشن کےعلاقہ مکینوں کا احتجاج