Card image cap
کویت: عمارت میں خوفناک آتشزدگی سے 40 افراد جان سے گئے

کویت کے جنوی شہر منگاف میں تارکین وطن کی عمارت کو لگنے والی آگ کے نتیجے میں کم از کم 40 افراد ہلاک اور درجنوں زخمی ہوگئے۔

انڈیا ٹوڈے کی رپورٹ میں بتایا گیا کہ جھلس کر ہلاک ہونے والے 40 افراد کا تعلق بھارت سے ہے۔ عمارت میں آگ چھوٹے پیمانے پر لگی تھی جس نے تیزی سے پوری بلڈنگ کو اپنی لپیٹ میں لے لیا۔

عمارت کویت کے بڑے تعمیراتی گروپ این بی ٹی سی نے تعمیر کی تھی۔

نائب وزیر اعظم شیخ فہد یوسف سعود الصباح نے جائے حادثہ کا دورہ کیا اور حکام سے حادثے کی رپورٹ طلب کر لی۔

شیخ فہد یوسف سعود الصباح نے واقعے کا ذمہ دار رئیل اسٹیٹ کے مالک کو ٹھہراتے ہوئے کہا کہ ریئل اسٹیٹ مالک کی لالچ کی وجہ سے افسوسناک حادثہ پیش آیا۔

کویت پولیس کے سینئر افسر نے بتایا کہ آگ علی الصبح 6 بجے ایک کچن میں لگی تھی، عمارت میں زیادہ تر تارکین وطن مقیم ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ بلڈنگ میں پھنسے دیگر رہائشیوں کو بحفاظت نکال لیا۔

Card image cap
ناگاساکی ایٹمی حملہ، تقریب میں اسرائیلی سفیر کا ’داخلہ بند‘

ناگاساکی ایٹم بم حملے کی برسی پر جاپان نے اسرائیل سفیر کو تقریب میں مدعو نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

نہتے فلسطینیوں کا وحشیانہ قتل عام اور نسل کشی کرنے والا اسرائیل عالمی فورمز پر تنہائی کا شکار ہے اور اب اسے کئی ممالک اپنے ہاں منعقدہ تقریبات میں بھی مدعو نہیں کر رہے۔

میئر ناگاساکی کا کہنا ہے کہ غزہ کی سنگین انسانی صورتحال کے پیش نظر تقریب میں اسرائیلی سفیر کو نہ بلانے کا فیصلہ کیا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ جانتے ہیں غزہ بحران کو دنیا بھر کے لوگ کس نظر سے دیکھ رہے ہیں اس لیے تقریب میں غیرمتوقع واقعات کےخطرے کو رد نہیں کر سکتے۔

امن کی تقریب 9 اگست کو ناگاساکی پر ایٹم بم حملے کی 79 ویں برسی کے موقع پر منعقد کی گئی ہے۔

میئر سوزوکی نے کہا کہ وہ ٹوکیو میں اسرائیلی سفارت خانے کو ایک خط بھیجیں گے جس میں فوری جنگ بندی پر زور دیا جائے گا۔

ہر سال مئی کے آخر سے جون کے شروع تک، ناگاساکی کے حکام جاپان میں تمام سفارت خانوں کو دعوت نامے بھیجتے ہیں۔ تاہم، روس اور بیلاروس کو 2022 میں یوکرین پر ماسکو کے حملے کے آغاز کے بعد سے امن ایونٹ سے باہر رکھا گیا ہے۔

Card image cap
اسرائیلی قیادت کا حماس کے رہنماؤں سے موازنہ نہیں ہو سکتا، جرمنی

جرمنی نے کہا ہے کہ اعلیٰ اسرائیلی حکام کا حماس کے رہنماؤں سے موازنہ نہیں کیا جا سکتا۔

جرمن حکومت کے ترجمان کا کہنا ہے کہ بین الاقوامی فوجداری عدالت کے پراسیکیوٹر کی جانب سے حماس کے رہنماؤں کے وارنٹ گرفتاری کی درخواست منطقی ہے اور اس کا اسرائیل کے وزیر اعظم اور وزیر دفاع سے کوئی موازنہ نہیں کیا جا سکتا جن کے وارنٹ بھی طلب کیے جا رہے ہیں۔

منگل کو ترجمان نے کہا کہ چیف پراسیکیوٹر کے الزامات سنگین ہیں اور ان کی تصدیق ہونی چاہیے۔

انہوں نے مزید کہا کہ جرمنی نے اسرائیل کے جمہوری نظام اور قانون کی حکمرانی کو ایک مضبوط، آزاد عدلیہ کے ساتھ سنبھالا ہے جو فیصلہ کرنے والے ججوں کے ذریعہ وارنٹ جاری کرنے کا فیصلہ کیا جائے گا۔

آئی سی سی پراسیکیوٹر نے اسرائیلی وزیر اعظم، وزیر دفاع اور حماس کے 3 رہنماؤں کے وارنٹ گرفتاری طلب کر لیے ہیں۔
بین الاقوامی فوجداری عدالت (آئی سی سی) کے چیف پراسیکیوٹر نے سات ماہ کی جنگ کے دوران اسرائیلی وزیر اعظم بنجمن نیتن یاہو اور وزیر دفاع یوو گیلنٹ کے خلاف ان کی کارروائیوں کے سلسلے میں وارنٹ گرفتاری کے لیے درخواست دی ہے۔

آئی سی سی کے پراسیکیوٹر کریم خان نے حماس کے تین رہنماؤں: یحییٰ سنوار، محمد دیف اور اسماعیل ہنیہ کی گرفتاری کا بھی مطالبہ کیا ہے۔

پراسیکیوٹر نے کہا کہ غزہ میں کم از کم 8 اکتوبر 2023 سے درج ذیل جنگی جرائم اور انسانیت کے خلاف جرائم کی مجرمانہ ذمہ داری پر یقین کرنے کی معقول بنیادیں موجود ہیں

Card image cap
ممبئی بل بورڈ حادثے میں نامور اداکار کے رشتے دار بھی جان سے گئے

ممبئی میں طوفانی ہواؤں سے بل بورڈ گرنے کی وجہ سے 16 افراد ہلاک ہوئے تھے جن میں معروف بالی وڈ اسٹار کارتک آریان کے رشتے دار بھی شامل ہیں۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق بل بورڈ حادثے میں کارتک آریان کے رشتے داروں کی ہلاکت کی خبریں سوشل میڈیا پر گردش کر رہی ہیں جن سے ان کے مداح کافی مایوس ہیں۔

اب تک کارتک آریان کی جانب سے کوئی بیان جاری نہیں کیا گیا تاہم انہیں آج ہلاک رشتے داروں کی آخری رسومات میں شریک ہوتے ہوئے دیکھا گیا۔

 مئی کو پیش آئے افسوسناک حادثے میں بالی وڈ اسٹار کے چچا منوج چنسوریا اور چچی انیتا ہلاک ہوئے تھے۔

 دونوں میاں بیوی امریکا میں موجود اپنے بیٹے یش کے پاس جانے کی تیاری کے سلسلے میں ممبئی میں ویزا کیلیے ضروری کاغذات مکمل کر رہے تھے۔

ایک پیٹرول پمپ کے قریب اچانک طوفانی ہوائیں چلنے سے بل بورڈ گر گیا جس میں کے نتیجے میں 16 افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہوئے۔ کارتک آریان کے رشتے داروں کی لاشیں 56 گھنٹے بعد ملبے سے نکالی گئی تھیں۔

والدین کی ہلاکت کی خبر سن کر بیٹا یش امریکا سے ممبئی پہنچا اور آخری رسومات میں شامل ہوا۔


بی جے پی انتخابات جیتنے کے لئے پاکستان کا نام استعمال کرنے کی محتاج ہوگئی

بھارتی انتخابات کے دوران بی جے پی پاکستان کا نام استعمال کرنے کی محتاج ہوگئی، پاکستان کیخلاف زہراگل کر بی جےپی ووٹرز کومتاثر کرتی ہیں۔

تفصیلات کے مطابق تمام کوششوں کے ناکام ہونے کے بعد بی جے پی نے پاکستان اور مسلمان مخالف بیانیے کا استعمال شروع کر دیا۔

انتخابی مہم کےدوران پاکستان کیخلاف زہراگل کر بی جےپی ووٹرز کومتاثر کرتی ہیں اورلوک سبھا میں نشست یقینی بنا لیتی ہیں۔

بھارت کے حالیہ انتخابات میں مودی سرکار نے پاکستان کیخلاف جارحانہ موقف اختیارکیا اور اپنی ہر تقریر میں بے بنیاد الزامات کے ساتھ ساتھ دھمکیوں کابھی استعمال کیا۔

حال ہی میں اپوزیشن جماعتیں کانگرس کےلیڈر منی شنکر آئر نے اپنی تقریر میں مودی کی مخالفت کرتے ہوئے پاکستان کے حق میں تقریر کی۔

منی شنکر آئر نے کہا کہ بھارت کوپاکستان کی عزت کرنی چاہیےکیونکہ خود مختار ریاست پاکستان ایٹمی طاقت کا حامل ہے۔

موقع کا فائدہ اٹھاتےہوئےمودی نےکانگرس کوشدیدتنقیدکانشانہ بنایا اور پاکستان کے خلاف پوری تقریر کر ڈالی۔

بھارت نے ہمیشہ نہ صرف خطے کے امن کوتباہ کیا بلکہ اپنےمذموم مقاصد کی خاطر اپنی عوام کو بھی تباہی اور بدامنی کی جانب دھکیلا ہے۔

سال 2019 میں ہونے والا پلوامہ ڈرامہ اور مودی کی اداکاری آج بھی عالمی سطح پر بھارت کیلئے جگ ہنسائی کا سبب ہے۔

حالیہ انتخابات کےدوران بھی مودی نےراجوری اور پونچھ میں دہشتگردی کاڈھونگ رچاتے ہوئے بھارتی عوام کو بے وقوف بنانے کی بھرپور کوشش کی۔

بھارتی لیڈر پریانکا گاندھی کا کہنا ہے کہ بھارت میں بےروزگاری پچھلے 45برسوں کے مقابلے میں بلند ترین سطح پر ہے لیکن ہم پاکستان پر بحث کرنے میں مصروف ہیں۔

پریانکا گاندھی کا کہنا تھا کہ بھارت کی عوام فیصلہ کر چکی ہےکہ اس بار ووٹ مذہب اور پاکستان مخالف بیانیے کے بل بوتے پر نہیں بلکہ مہنگائی، بےروزگاری اور کسانوں کے مسائل پر توجہ دیتے ہوئے دیے جائیں گے۔

اس سے پہلے بھی مودی اپنی انتخابی مہم میں مسلمانوں کیخلاف نفرت انگیز تقاریر اور بیانیے کا استعمال کرتا رہا ہے۔

مودی اور بی جے پی کی جانب سے مسلمانوں اورپاکستان کیخلاف نفرت انگیز مواد کے پھیلاؤ اور بڑھاوے کے باعث ہندوستان میں مسلمان سنگین عدم تحفظ اور انتہاپسندی کا شکار ہیں۔

اقوام متحدہ اورہیومن رائٹس واچ جیسی انسانی حقوق کی تنظیمیں بھی ہندوستان میں مسلمانوں کیخلاف ہونے والی انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں پر مودی سے جواب طلب کر چکی ہیں۔

بی جے پی اپنی عوام کی حمایت حاصل کرنے کیلئے پاکستان کی محتاج نظر آتی ہے ، اب سوال یہ اٹھتا ہے کہ کیا بھارت کی انتہا پسند سیاسی جماعتیں خطے میں ایسے ہی بدامنی پھیلانے میں مگن رہیں گی اور اپنے مذموم سیاسی فوائد کی خاطر خطے کے ساتھ ساتھ اپنی عوام کی بھلائی بھی داؤ پر لگا دیں گی؟

بی جے پی نے ایک اور مسجد کی جگہ مندر تعمیر کرنے کا منصوبہ بنا لیا

نئی دہلی: نریندر مودی کی ہندو انتہا پسند جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے ایک اور مسجد شہید کر کے اس کی جگہ مندر تعمیر کرنے کا منصوبہ بنا لیا۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق بھارت میں لوک سبھا الیکشن 2024 کا چوتھا مرحلہ جاری ہے جس کیلیے مختلف ریاستوں میں ووٹ ڈالے جا رہے ہیں۔

ریاست آسام کے وزیر اعلیٰ و رہنما بی جے پی ہیمنا بسوا سرما نے ووٹرز سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ انہیں زیادہ سے زیادہ ووٹ دیں تاکہ ہم 400 نشستیں جیت کر گیانواپی کی جگہ پر بابا وشو ناتھ کا مندر تعمیر کریں۔

انتخابی ریلی کے دوران خطاب میں ہیمنا بسوا سرما نے کہ بی جے پی گیانواپی مسجد کی جگہ ایک مندر دیکھنا چاہتی ہے، ہمیں کرشنا جنم بھومی بنانا ہے۔

’نریندر مودی کے نام کا باب ختم ہونے جا رہا ہے‘

انہوں نے کہا کہ ہمیں یہ بھی یقینی بنانا ہے کہ آئندہ کبھی رام مندر کی جگہ کوئی بابری مسجد نہ بن سکے، ہم ملک میں یکساں سول کوڈ لانا چاہتے ہیں۔

خیال رہے کہ 1992 میں ہندو انتہا پسندوں نے بابری مسجد پر حملہ کر کے اسے شہید کیا تھا اور حال ہی میں اس کی جگہ مودی سرکاری نے رام مندر تعمیر کیا جس کا افتتاح بھارتی وزیر اعظم نے 22 جنوری کو کیا تھا۔

ہیمنا بسوا سرما نے شرکا سے کہا کہ نریندر مودی نے ہدایت کی ہے کہ 400 سے زیادہ نشستیں لینی ہیں تاکہ وہ اپنے کئی ایسے منصوبے مکمل کرنا چاہتے ہیں جو ابھی ادھورے ہیں۔

آسام وزیر اعلیٰ کا مذکورہ بیان نریندر مودی کے مدھیہ پردیش اور مہاراشٹر میں ریلیوں میں اسی طرح کے ریمارکس دینے کے چند دن بعد آیا۔

7 مئی کو نریندر مودی نے دعویٰ کیا تھا کہ نیشنل ڈیموکریٹک الائنس کو پارلیمنٹ میں 400 سے زیادہ سیٹیں درکار ہیں تاکہ کانگریس جموں و کشمیر (بھارت کے زیرِ قبضہ) میں دفعہ 370 کو بحال کر سکے۔

صدر بنا تو مظاہرین طلبہ کو ملک بدر کر دوں گا: ٹرمپ کی ویڈیو وائرل

نیوجرسی: سابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے فلسطینیوں کے حق میں مظاہرے کرنے والے یونیورسٹی طلبہ کو دھمکی دی ہے کہ وہ امریکی صدر بنے تو انھیں ملک بدر کر دیں گے۔

نیوجرسی میں ایک انتخابی ریلی میں خطاب کرتے ہوئے ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا کہ وہ غزہ میں اسرائیل کی جنگ کے خلاف یونیورسٹی کیمپس میں مظاہرے کرنے والے طلبہ کے ساتھ زیادہ سختی سے نمٹیں گے۔

ٹرمپ نے ان اسکولوں کو بھی دھمکی دی جنھوں نے اسرائیل کی حمایت سے خود کو دور غیر جانب دار رکھا ہے، ٹرمپ نے اپنے حامیوں سے خطاب میں کہا کہ ’’جب میں صدر بنوں گا تو اپنے کالجوں کو متشدد بنیاد پرستوں کے قبضے میں جانے کی اجازت نہیں دوں گا۔‘‘

کریمنل مقدمات کا سامنا کرنے اور نومبر کے صدارتی انتخابات میں دوبارہ حصہ لینے والے ٹرمپ نے کہا کہ اگر آپ کسی دوسرے ملک سے یہاں آتے ہیں اور ہمارے کیمپس میں امریکا دشمنی یا یہود دشمنی لانے کی کوشش کرتے ہیں، تو ہم آپ کو فوراً ملک بدر کر دیں گے۔

بھارت میں مسلم ووٹرز کو دھمکیاں ملنے لگیں

بھارت میں لوک سبھا انتخابات کا تیسرا مرحلہ جاری ہے جہاں مسلم ووٹرز کو پریشان کیے جانے کے ساتھ انہیں دھمکیاں بھی دی جا رہی ہیں۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق سماجوادی پارٹی نے دعویٰ کیا کہ متعدد علاقوں میں پولیس کی جانب سے مسلم ووٹرز کو نہ صرف پریشان کیا جا رہا ہے بلکہ ان پر حکمران جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کو ووٹ دینے کیلیے دباؤ بھی ڈالا جا رہا ہے۔

سماجوادی پارٹی کے آفیشل ایکس اکاؤنٹ سے ٹوئٹس کیے گئے کہ ای وی ایم خراب ہونے کی اطلاعات ہیں اور ہماری پارٹی کے لوگوں کو ایجنٹ بنانے سے روکا جا رہا ہے، بعض مقامات پر جان بوجھ کر ووٹنگ سست رفتار سے کروائی جا رہی ہے۔

اپوزیشن جماعت نے کہا کہ الیکشن میں مسلم ووٹرز کو دھمکیاں دی جا رہی ہیں، مین پوری شہر میں بی جے پی کے ضلعی صدر ووٹرز کو ڈرا دھمکا رہے ہیں جبکہ کشنی میں بی جے پی کے حامی ووٹرز بغیر شناختی کارڈ کے ووٹ ڈال رہے ہیں۔

ٹوئٹس میں کہا گیا کہ سنبھل سیٹ پر مسلم ووٹرز سے شناختی کارڈ چھین لیے گئے تاکہ وہ بی جے پی کے مخالفین کو ووٹ نہ ڈال سکیں۔

سماجوادی پارٹی نے الیکشن کمیشن آف انڈیا سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ فوری طور پر ان شکایات کا نوٹس لے تاکہ شفاف انتخابات ہو سکیں۔

لیسکو کےخلاف شاہدرہ سٹیشن کےعلاقہ مکینوں کا احتجاج

لیسکو کےخلاف شاہدرہ سٹیشن کےعلاقہ مکینوں کا احتجاج