17

شان دار پی ایس ایل کا یادگار اختتام

پاکستان سپر لیگ کا شان دارمیلہ اتوار کو کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کی کامیابی کے ساتھ یاد گار انداز میں اختتام کو پہنچا، فائنل میں پشاور زلمی کو شکست کا سامنا کرنا پڑا، فائنل کے موقع پر آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ اور دیگر اہم شخصیات بھی موجود تھیں۔بورڈ کے پیٹرن انچیف وزیر اعظم پاکستان عمران خان نے اگلا پی ایس ایل مکمل طور پر پاکستان میں کرانے کا اعلان کرکے مقامی تماشائیوں کوخوشی فراہم کی، اور کراچی میں مقیم غیر ملکی کرکٹرز کو پیغام دیا کہ وہ اگلے ایونٹ کے لئے پاکستان آنے کی مکمل تیاری کر لیں۔پاکستان سپرلیگ کے فائنل تک ہونے والے آٹھ میچوں کی وجہ سے کراچی میں کرکٹ کی رونقیں عروج پر رہیں،غیر ملکی کرکٹرز کی مہمان نوازیاں خوب رہیں ،سنسنی خیز میچز نے پوری دنیا کو اپنی لپیٹ میں لیا تو کراچی کے تماشائیوں نے ہر میچ میں اسٹیڈیم بھرکے دنیا بھر میں واضح پیغام پہنچادیا،یہی وجہ ہے کہ لیجنڈری کرکٹر ویون رچرڈز سے لیکر تمام موجودہ غیر ملکی کرکٹرز نے پاکستان میں کھیلنے کو اعزاز قرار دیا اور آئندہ بھی یہاں کھیلنے کا اعلان کیا۔ فائنل میں کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے تیسری مرتبہ کوالیفائی کیا ، لیگ کے 4ایڈیشن میں فائنل کی ٹکٹ حاصل کرلینا کارنامہ ہے،پشاور زلمی ٹیم نے بھی خوب کرکٹ کھیلی اور جگہ پکی کی، ملتان سلطانز اور لاہور قلندرز حسب سابق باہر ہوگئی ،کراچی کنگز کا سفر بھی ماضی کی مثال ثابت ہوا جبکہ دفاعی چیمپئن اسلام آباد نہ صرف اعزاز کے دفاع سے محروم ہوئی بلکہ تیسری مرتبہ ٹائٹل جیتنے کی ریس سے باہر ہوگئی،اسے بڑی حد تک اپ سیٹ کہہ سکتے ہیں،پشاور زلمی ٹیم کی کارکردگی میں خوب تسلسل رہا،کیونکہ اس نے مسلسل تیسرا فائنل کھیلا،2017 میں وہ چیمپئن بنے،2018 میں رنراپ رہے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں