370

کراچی ایئرپورٹ پر پُراسرار چوری

کراچی کےجناح انٹرنیشنل ایئرپورٹ میں اے ایس ایف کاؤنٹر پر چیکنگ کے دوران پر اسرارانداز میں مسافر کے بیگ سے 7 ہزار سے زائد ڈالر چرالئے گئے ۔

کراچی سے غیرملکی پرواز کے ذریعے امریکا پہنچنے والے پاکستانی مسافر عثمان صدیقی نےویڈیو بیان میں بتایا کہ 23 جنوری کو کراچی ایئرپورٹ سے امیگریشن کے بعد اے ایس ایف کاونٹر پر پہنچا تو وہاں بیگ کو چیکنگ کے لئے الگ کیا گیا اور چند لمحوں میں تین لفافوں میں رکھے 7 ہزار سے زائد ڈالرز سادہ کاغذات اور ایک ایک ڈالر میں تبدیل کردیے گئے۔

مسافر عثمان صدیقی نے بتایا کہ طیارے میں بیٹھتے ہی چوری کا علم ہوا تو غیرملکی ایئرلائنز کے عملے کو آگاہ کیا لیکن اس وقت تک طیارہ اڑان بھر چکا تھا۔

ترجمان اے ایس ایف کا کہنا ہے ابتدائی تحقیقات کےمطابق چوری میں اے ایس ایف اہلکار ملوث نہیں ۔ سیکورٹی کاؤنٹر پر بیگ کی جانچ مسافر کے سامنے ہی ہوئی ہے۔

سی سی ٹی وی فوٹیج سے واضح ہے کہ سیکورٹی کاونٹر سے گزرنے کے بعد مسافر لاونج میں بیٹھ کر بیگ سے اپنے تینوں لفافے نکال کر دیکھتا ہے ۔ مسافر نے شکایت طیارے میں بیٹھنے کے بعد کی ہے ۔ معاملے کا باریک بینی سے جائزہ لیا جارہا ہے ۔

بیگ سے کرنسی نوٹ چوری کرلیے جانے کی ایک ایسی ہی شکایت ایک پاکستانی تاجر امین عبدالرحمان نے بھی گزشتہ سال ایک ویڈیو پیغام کے ذریعہ کی تھی جسے کراچی سے سری لنکا پہنچنے پر علم ہوا کہ اس کے بیگ سے تقریبا دس ہزار ڈالر غائب ہیں۔

سیکورٹی حکام کے مطابق ایرپورٹس پر مسافروں کے سامان کی چوری میں منظم گروہ کے ملوث ہونے کا انکشاف ہوا ہے، گروہ میں سیکورٹی اہلکاروں کے علاوہ کسٹمز اور ایرلائنز کا اسٹاف بھی ملوث ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں