181

پنجاب حکومت کا ایک اور بڑا یو ٹرن سامنے آگیا

پنجاب حکومت کا ایک اور یو ٹرن سامنے آگیا، بزدار سرکار پارٹی منشور کے برعکس وزراء کے صوابدیدی فنڈز ختم نہ کرسکی۔یہ بھی لازمی پڑھیں:میٹروپولیٹن کارپوریشن چیئرمین اتحاد کے پریشر گروپ کے سامنے بےبس

تحریک انصاف نے اپنے وزراء کے سامنے گھٹنے ٹیک دیئے, بزدار سرکار صوبائی وزراء کے صوابدیدی فنڈز ختم کرنے میں ناکام ہوگئی، الیکشن 2018 سے قبل تحریک انصاف نے اپنے منشور میں وزراء کے صوابدیدی فنڈز ختم کرنے کا اعلان کیا تھا مگر 7 ماہ گزرنے کے باوجود جہاں تحریک انصاف نے بہت سے یو ٹرنز لیے وہاں اس کا وزراء کے صوابدیدی فنڈز کے حوالے سے بھی بڑا یو ٹرن سامنے آگیا ہے۔

 7 ماہ سے صوبائی وزراء صوابدیدی فنڈز سے لطف اندوز ہورہے ہیں، پارلیمانی استحقاق کے مطابق ہر وزیر کو 3 لاکھ روپے سالانہ صوابدیدی فنڈز دینے کا اختیار حاصل ہے۔

تحریک انصاف نے تو اپنے منشور میں باقاعدہ طور پر وزراء کے صوابدیدی فنڈز ختم کرنے کا اعلان کیا ہوا تھا تاہم ن لیگ نے تو اس حوالے سے کوئی وعدہ یا اعلان تو نہیں کیا تھا مگر اسکی پنجاب حکومت نے 10 سال تک صوبائی وزراء کے صوابدیدی فنڈز پر پابندی لگائی رکھی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں