99

وفاق نے بھی پنجاب کی اُمیدوں پر پانی پھیر دیا

حکومت کو کورونا وائرس کے باعث شدید مالی بحران کا سامنا ہے، ذرائع کے مطابق نئے مالی سال میں وفاق سے بھی حصہ میں کٹ لگائے جانے کا امکان ہے، نئے مالی سال میں پنجاب کو وفاق سے ایک ہزار ارب روپے ملنے کی امید تھی تاہم اب وفاق کی جانب سے 425 ارب روپے کا کٹ لگایا جا رہا ہے، جس کے بعد پنجاب کو 575 ارب روپے موصول ہوں گے، جبکہ پنجاب کو اپنے محصولات میں بھی 125 ارب روپے کی کمی کا سامنا ہے۔ن لیگ نے پرویزالہیٰ کو خط لکھ دیا

ذرائع کے مطابق وفاق کے کٹ اور اپنے محصولات میں کمی کے باعث پنجاب کو نئے مالی سال میں کل 600 ارب روپے کے شارٹ فال کا سامنا ہے، جس کے باعث پنجاب حکومت نے محکموں کا ترقیاتی اور غیر ترقیاتی بجٹ بھی مکمل ختم کردیا ہے اور افسران و ملازمین کی تنخواہوں کی ادائیگی میں بھی کمی کا سامنا ہے۔خصوصی پروازوں میں بھی باکمال لوگوں کی لاجواب سروس

ذرائع کے مطابق پنجاب کے پاس ترقیاتی بجٹ کی مد میں صرف 130 ارب روپے موجود ہیں، جن میں سے 90 ارب روپے بین الاقوامی ایجنسیوں کے تعاون سے جاری منصوبوں میں لازمی لگائے جانے ہیں، بقیہ 40 ارب سے تمام محکموں کو کیسے فنڈنگ کی جائے گی اس پر پالیسی بنائی جارہی ہے۔

یاد رہے کہ پنجاب حکومت نے کورونا وائرس  اور لاک ڈاؤن کے باعث مالی خسارے کے پیشِ نظر صوبے میں 135 ارب روپے کے ترقیاتی فنڈز روک لیے،جبکہ مالی بحران کے باعث غیر ترقیاتی بجٹ پر بھی کٹ لگاتے ہوئے صوبائی محکموں کے اسٹیشنری و دفتری سامان کی خریداری غیر ضروری پٹرول سمیت دیگر روزمزہ کے اخراجات بھی ختم کردیئے گئے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں