242

فریش دودھ کی فروخت پرپابندی لاہور ہائیکورٹ میں چیلنج

پنجاب میں فریش دودھ کی فروخت پرپابندی کو لاہور ہائیکورٹ میں چیلنج کردیا گیا، عدالت نے پنجاب فوڈ ا تھارٹی سے 10 جون تک جواب طلب کرلیا۔مزید خبریں:لاہور سمیت پنجاب بھر کی جیلوں میں جاں لیوا مرض پھیلنے لگا

جسٹس عابد عزیز شیخ نے شہری شاہد اقبال کی درخواست پر سماعت کی، درخواست گزار کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ وہ بچپن سے گھر میں بازاری دودھ استعمال کررہے ہیں، فوڈ اتھارٹی نے نوٹیفکیشن جاری کرتے ہوئے فریش دودھ کی فروخت پر پابندی لگا دی، ریگولیشنز کے تحت 2022 تک پنجاب فوڈ اتهارٹی فریش دودھ کی فروخت پر پابندی نہیں لگا سکتی، فریش دودھ کی فروخت پر پابندی عائد کرنا آئین کی خلاف ورزی ہے۔

درخواست گزار نے استدعا کی کہ عدالت فریش دودھ کی فروخت پرپابندی کا نوٹیفکیشن کالعدم قرار دے، عدالت نے لاء افسر کو تازہ دودھ کی فروخت بارے جواب دینے کی ہدایت کرتے ہوئے سماعت 10 مئی کے لئے ملتوی کردی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں