173

صنعتوں اور سی این جی سیکٹر کو ایک بار پھر گیس کی بندش

صنعتوں اور سی این جی سیکٹر کو ایک بار پھر گیس کی بندش، گیس فراہمی کی معطلی آر ایل این جی پلانٹ کی مرمت کے باعث کی گئی، مرمتی کام 60 گھنٹے جاری رہے گا، اینگرو ٹرمینل کا ٹائم فریم دینے سے انکار۔یہ بھی لازمی پڑھیں:لاہور کی سب سے قدیم اور منفرد مسجد

اینگرو ٹرمینل سے 60 گھنٹے کی مرمت اور بندش کے بعد آر ایل این جی کی فراہمی گزشتہ رات آٹھ بجے شروع ہونی تھی تاہم اینگرو ٹرمینل سے ڈاؤن اسٹریم پاور پلانٹس (جی پی پی)، عام صنعتوں اور سی این جی سیکٹر کو گیس فراہمی بحال نہیں کی جاسکی۔ اب تک اینگرو کی جانب سے ٹرمینل 1 سے ری گیسیفکیشن کے آغاز کے حوالے سے فی الحال کوئی ٹائم فریم نہیں دیا گیا ہے۔

گزشتہ رات سوئی ناردرن گیس کی درخواست پر ٹرمینل 2 (پی جی پی سی) سے ری گیسیفکیشن ریٹ 225 ایم ایم سی ایف ڈی سے بڑھا کر 600 ایم ایم سی ایف ڈی کردیا گیا تھا تاکہ گھریلو اور دیگر ترجیحاتی سیکٹرز کو گیس فراہمی جاری رہ سکے۔ پی جی پی سی ٹرمینل سے 600 ایم ایم سی ایف ڈی ری گیسیفکیشن ریٹ پر گیس فراہمی اگلے چند گھنٹوں تک جاری رہ سکتی ہے جس کے بعد اسے بھی کم کرنا ہوگا۔

اینگرو ٹرمینل سے گیس فراہمی کے آغاز میں مزید کسی تاخیر کے سوئی ناردرن گیس کے لیے ترجیحاتی سیکٹرز کو گیس فراہمی جاری رکھنا بھی مشکل ہوسکتی ہے۔ سوئی ناردرن پر اس تمام صورتحال کی کوئی ذمہ داری عائد نہیں ہوتی۔ آر ایل این جی کی سپلائی میں سوئی ناردرن گیس کا کردار محض آر ایل این جی کو سسٹم کے داخلی پوائنٹ سے لے کر صارفین تک پہنچانا ہے اور یہ کردار سوئی ناردرن گیس نے ہمیشہ احسن طریقے سے اور پوری ذمہ داری سے ادا کیا ہے۔یہ بھی لازمی پڑھیں:نواز شریف کے بلڈ اور شوگر ٹیسٹ کی رپورٹ آگئی

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں