189

سفید اور کالے کوٹ کی جنگ، وکلاء نے پولیس کو ڈیڈ لائن دیدی

پی آئی سی میں ڈاکٹرز،وکلا کے مابین جھگڑے کامعاملہ سنگین ہوگیا، لاہور بار کے وکلاء نے پولیس کو پی آئی سی کے ڈاکٹروں کے نام دیتے ہوئے شام تک گرفتار کرنے کی ڈیڈلائن دیدی، شام تک گرفتاری عمل میں نہ لائی گئی تو وکلاء کل خود پی آئی سی جا کر گرفتاریاں کرائیں گے۔

مزید خبریں:خصوصی ڈیوٹیز، آپریشنز پر تعینات پولیس اہلکاروں کو ایمرجنسی پینک بٹن ملے گا
وکلا اور ڈاکٹروں کے درمیان جھگڑا مزید طول پکڑتا جا رہا ہے، لاہور بار کے وکلاء کا مطالبہ تھا کہ وکلاء پر تشدد کرنیوالے ڈاکٹر اور عملے کو گرفتار کیا جائے اورایم ایس پی آئی سی اور ڈی ایم ایس کو معطل کیا جائے۔

عاصم چیمہ کی صدارت میں آج ایوان عدل میں وکلاء کا اجلاس ہوا، جس میں بار کے صدر نے وکلاء کو اپنے لائحہ عمل سے آگاہ کیا، اس پر وکلاء نے پی آئی سی جانے کا مطالبہ کرتے ہوئے زبردست نعرے بازی کی۔

لاہور بار کے صدر عاصم چیمہ نے کہا کہ میں آپ کا نمائندہ ہوں ایسا قدم نہیں اٹھانا چاہتا، جس سے واپسی کا راستہ بند ہو جائے، آپ کے جذبات میرے جذبات ہیں، لیکن وکلاء پی آئی سی چلنے کا مطالبہ کرتے رہے۔

مزید خبریں:ہم اور آپ،27نومبر2019
اجلاس میں بار کے صدر نے مشکل سے وکلاء کے جذبات پر قابو پایا اور ان کو قائل کیا کہ ہم شام تک کی مہلت دیتے ہیں نام پہنچا دیئے ہیں، اگر گرفتاری عمل میں نہ لائی گئی تو ہم خود پی آئی سی جا کرسب کو گرفتارکرائیں گے۔اجلاس کل تک ملتوی کردیا گیا۔

دوسری جانب پی آئی سی میں تیسرے روزبھی ہڑتال جاری ہے، اوپی ڈیز میں سناٹے چھائے ہوئے ہیں، جس کی وجہ سے دور دراز سے آنے والے مریضوں کو بغیر علاج کے ہی واپس لوٹنا پڑ رہا ہے، گرینڈ ہیلتھ الائنس نے پی آئی سی عملے کیخلاف دہشتگردی کا جھوٹا مقدمہ ختم کرنے اور شرپسندوں کیخلاف کارروائی کا مطالبہ کردیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں