279

دفاعی شعبے کی حیرت انگیز ٹیکنالوجیز

سائنس کے میدان میں جہاں کائنات ،صحت ،خلاا ور دیگر شعبوں میں ترقی ہورہی ہے ،اسی طر ح دفاعی میدان میں جدید ہتھیار تیار کیے جارہے ہیں ۔گزشتہ دو دہائیوں میں جنگوں کی نوعیت میں بڑی تیزی سے تبدیلی رونماہوئی ہے۔شخصی ذہانت اورطاقت کو مصنوعی ذ ہا نت (artificial intelligence) کا سہارا مل گیا ہے۔ اور مستقبل میں مشینوں کے ذریعے لڑی جانے والی جنگوں میںانسانوں کے مقابلے میںکمپیوٹر کے ذریعےمنصوبہ بندی اور فریب کہیں زیادہ مؤثرہوگا۔اب مصنو عی ذہانت کے بل بوتے پر جنگوں کے نئے منصوبے اور حکمت عملیاں طے کی جا رہی ہیں اور پاکستان اس ترقی کی دوڑ میں دیگر ممالک کے مقابلے میں پیچھے رہ گیاہے۔ آج کل خفیہ و حساس طیارے اور آبدوزیں ایسی تیار کی جا رہی ہیں جن کے برقی سرکٹ کے نظام میں نہایت خطرناک “آلودہ چپس”(contaminated Chips) نصب کی جارہی ہیں جو کہ ایک بیرونی کوڈ کردہ برقی سگنل کے ذریعے طیارے اور آبدوز میں نصب ہتھیاروں کے نظام یا دیگر کنٹرول کو یکایک غیر فعال کر سکتی ہیں۔ ان چپس میں موجود پیچیدہ برقی سرکٹ کی بدولت ان کو شناخت کرنا تقریبا ًناممکن ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں