76

اپوزیشن نے پٹرول میں اضافہ، بجٹ کو ظالمانہ قرار دیتے ہوئے مسترد کردیا

 اپوزیشن نے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ اور بجٹ کو ظالمانہ قراردیتے ہوئے مسترد کردیا،آئندہ ہفتے اے پی سی بلانے پراتفاق ہواہے،پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے پاکستان مسلم لیگ (ن) کے صدر اور قائد حزبِ اختلاف شہباز شریف کو ٹیلی فون کیا۔جوہر ٹاؤن میں سرکاری پلاٹوں پر قبضہ مافیاکاراج

ترجمان مسلم لیگ (ن) مریم اورنگزیب کے مطابق بلاول بھٹو زرداری نے شہباز شریف کی مزاج پرسی کی اور ان کی صحت سے متعلق دریافت کیا۔ ترجمان نے بتایا کہ بلاول بھٹو زرداری نے شہبازشریف کی جلد صحت یابی کے لیے دعا کی جب کہ لیگی صدر نے مزاج پرسی اور نیک تمناؤں پر بلاول کا شکریہ ادا کیا۔

ترجمان کے مطابق دونوں رہنماؤں نے ملک کی مجموعی صورتحال پر بھی تبادلہ خیال کیا اور ملک کو درپیش صورتحال پر آئندہ ہفتے کل جماعتی کانفرنس (اے پی سی) بلانے پر مشاورت کی۔ مریم اورنگزیب کا کہنا تھا کہ شہبازشریف نے بلاول سے سابق صدر آصف زرداری کے لیے نیک تمناؤں کا اظہار کیا اور ان سے والد کی صحت کے حوالے سے بھی دریافت کیا۔سیل شدہ ڈیفنس میں بڑی واردات، پونے5 کروڑچوری

چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے جمعیت علمائے اسلام کے رہنما فضل الرحمان، امیر جماعت اسلامی سراج الحق، محسن داوڑ اور بلوچستان کے اپوزیشن رہنماؤں سے بھی ٹیلی فونک رابطہ کیا،بلاول بھٹو زرداری اور مولانا فضل الرحمان نے حکومتی بجٹ مکمل طور پر مسترد کرنے پر اتفاق کیا جبکہ کورونا کے پھیلاؤ کا معاملہ بھی زیربحث آیا۔کان میں کام کرنیوالا مزدور ایک لمحے میں امیر ہوگیا

بلاول نے مؤقف اپنایا کہ ملک میں حکومتی نااہلی کی وجہ سے کورونا وائرس پھیلا۔ بلاول بھٹو اور مولانا فضل الرحمان کے درمیان آئندہ ہفتے اے پی سی بلانے پر بھی مشاورت ہوئی۔علاوہ ازیں بلاول بھٹو زرداری اور رکن قومی اسمبلی محسن داوڑ کے درمیان بھی ٹیلی فونک رابطہ ہوا جس میں دونوں رہنماؤں نے ملکی سیاسی صورت حال پر بات چیت کی۔

بلاول بھٹو زرداری نے سینیٹر میر حاصل بزنجو کو بھی ٹیلی فون کیا اور دونوں رہنماؤں نے وفاقی بجٹ مسترد کرنے پر اتفاق کیا۔بلاول نے کہا کہ کورونا اور ٹڈی دل سے متعلق وزیراعظم کی نالائقی سامنے آچکی ہے۔ بلاول بھٹو زرداری اورحاصل بزنجو نے آل پارٹیز کانفرنس بلانے پر بھی اتفاق کیا۔چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے ایمل ولی خان کو بھی فون کیا اور عوامی نیشنل پارٹی کے سربراہ اسفند یار ولی کی صحت سے متعلق دریافت کیا۔

بلاول بھٹو اور ایمل ولی خان نے آل پارٹیز کانفرنس بلانے پر اتفاق کیا۔ جس کے بعد بلاول نے امیرجماعت اسلامی سراج الحق سے ٹیلی فونک رابطہ کیا۔بلاول بھٹو زرداری اور سراج الحق کے درمیان آئندہ ہفتے آل پارٹیز کانفرنس بلانے کے حوالے سے بھی مشاورت ہوئی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں