28

اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں پاکستان کی تاریخی قرار داد منظور

قوام متحدہ کی جنرل اسمبلی نے متفقہ طور پر “انسانی حقوق اور بنیادی آزادیوں کے فروغ اور تحفظ کے لیے غلط معلومات کا مقابلہ کرنے” سے متعلق پاکستان کی تاریخی قرارداد منظور کرلی۔

پاکستان کے زیر اہتمام “کاونٹرنگ ڈس انفارمیشن فار دی پروموشن اینڈ پروٹیکشن آف ہیومن رائٹس اینڈ بنیادی فریڈمز” کے عنوان سے قرارداد کو اتفاق رائے سے منظور کرلیا گیا ہے۔پاکستان نے دنیا بھر میں غلط معلومات کے بے دریغ پھیلاؤ کے پس منظر میں پہل کی۔ یہ رجحان سماجی انتشار کو بڑھا رہا ہے اور امتیازی سلوک، نفرت انگیز تقریروں کو ہوا دے رہا ہے۔ 

یہ قرار داد تمام رکن ممالک کے ساتھ وسیع البنیاد اور وسیع مشاورت کا نتیجہ تھی۔ اسے ریاستوں کی ایک بڑی تعداد نے اسپانسر کیا تھا۔ قرارداد کو متفقہ طور پر اپنانے سے شفافیت کو فروغ دینے اور اقوام متحدہ میں ریاستوں اور متعلقہ اسٹیک ہولڈرز کی جانب سے غلط معلومات کا مقابلہ کرنے کے لیے ایک مشترکہ مہم شروع کرنے میں مدد ملے گی۔

قرارداد میں انسانی حقوق اور بنیادی آزادیوں سے لطف اندوز ہونے پر آن لائن پلیٹ فارمز اور سوشل میڈیا کے ذریعے غلط معلومات کے تیزی سے پھیلاؤ کے منفی اثرات کو اجاگر کیا گیا ہے۔ یہ تشویش کے ساتھ نوٹ کرتا ہے کہ ICTs نے غیر معمولی پیمانے، رفتار اور دائرہ کار پر سیاسی، نظریاتی، یا تجارتی مقاصد کے لیے غلط یا ہیرا پھیری سے متعلق معلومات کو تخلیق، پھیلانے اور پھیلانے کے راستے کو فعال کیا ہے۔

کاروباری اداروں،  بشمول آن لائن پلیٹ فارمز اور سوشل میڈیا کمپنیوں سے کہا گیا ہے کہ وہ اپنے پلیٹ فارمز کو غلط معلومات پھیلانے کے لیے استعمال کرنے کی اجازت نہ دیں۔ یہ رجحان امتیازی سلوک، نفرت، دشمنی، تشدد اور پولرائزیشن کا باعث بنتا ہے۔ قرارداد میں ان سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ وہ واضح اور شفاف مواد اور اشتہاری پالیسیاں اپنائیں جو کہ غلط معلومات کے انسداد کے لیے انسانی حقوق کے بین الاقوامی قانون کے مطابق ہوں۔ قرارداد میں ریاستوں کی ذمہ داری کی بھی توثیق کی گئی ہے۔ 

ریاستیں غلط معلومات کے پھیلاؤ کا مقابلہ کریں جو ریاستوں کے درمیان امن اور تعاون کے فروغ کو نقصان پہنچاتی ہیں۔ اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل کی غلط معلومات کے انسداد کے لیے بین الاقوامی تعاون کو فروغ دینے کی کوششوں کا خیرمقدم کرتا ہے۔ “عالمی ضابطہ اخلاق جو عوامی معلومات میں دیانت کو فروغ دیتا ہے۔” جھوٹ اور پروپیگنڈے کا شکار ہونے کے ناطے، پاکستان غلط معلومات کے وائرس کا مقابلہ کرنے کے لیے پرعزم ہے۔ یہ اقوام متحدہ کی سرپرستی سمیت بین الاقوامی تعاون کی حوصلہ افزائی کے ذریعے یہ کام جاری رکھے گا۔ 

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں