117

روزہ بلڈ پریشر، کولیسٹرول میں کمی کا سبب بنتا ہے، ماہرین

دل ، گردے اور شوگر کے مریض ڈاکٹروں کے مشورے سے پورا رمضان کے روزے رکھ سکتے ہیں،روزہ بلڈ پریشر ،کولیسٹرول اور موٹاپے میں کمی کا سبب بھی بنتا ہے، دل کے دورے سے محفوظ رکھتا ہے، روزے کی حالت میں آنکھ اور کان میں دوا ڈلوانے ، خون کے ذریعے شوگر چیک کرنے ، انسولین یا کسی بھی قسم کا انجکشن لگانے سے روزہ نہیں ٹوٹتا۔

ان خیالات کا اظہارماہرین نے کالج آف فزیشن اینڈ سرجن پاکستان میں منعقدہ پانچویں رمضان اور زیابطیس کانفرنس کے اختتامی روز خطاب کرتے ہوئے کیا ، کانفرنس کا انعقاد بقائی انسٹی ٹیوٹ آف ڈائبیٹالوجی اینڈ کرائنالوجی ،رمضان اور حج اسٹڈی گروپ نے ڈار انٹرنیشنل الائنس کے تعاون سے کیا تھا۔

ملکی و غیر ماہرین صحت نے کہا ہے کہ دل ، گردے اور شوگر کے امراض میں مبتلا افراد ڈاکٹروں کے مشورے سے نہایت آسانی کے ساتھ پورے رمضان کے روزے رکھ سکتے ہیں ،مریضوں کو چاہیے کہ وہ رمضان کا مہینہ شروع ہونے سے پہلے اپنے معالجین سے مشورہ کر لیں ۔اتائیوں کے پاس جانے سے گریز کریں، روزے کی حالت میں آنکھ اور کان میں دوا ڈلوانے ، خون کے ذریعے شوگر چیک کرنے ، انسولین یا کسی بھی قسم کا انجکشن لگانے سے روزہ نہیں ٹوٹتا۔حاملہ خواتین روزہ رکھ سکتی ہیں لیکن اگر ان کی اور ان کے بچے کی جان کو خطرہ ہو تووہ روزہ توڑ سکتی ہیں۔

کانفرنس میں برطانیہ، قطر، سعودی عرب،متحدہ عرب امارات، مصر،ترکی سمیت مشرق بعیداور افریقہ کے ماہرین نے شرکت کی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں